درال دریا کی فریاد

گزشتہ دنوں سوات کے خوبصورت سیاّحتی مقام بحرین کے حلق ”دریائے درال“ کی تصویر سوشل میڈیا پر دیکھی تو سکتہ طاری ہوگیا۔ اپنی زندگی میں پہلی بار دریائے درال کو مردہ دیکھ کر یقین نہیں ارہا تھا۔ اس تصویر کو نوجوانوں نے اپنے فیس بک صفحوں پر کئی…

مردم شماری میں ’’زبان‘‘ کا مسئلہ

گزشتہ مردم شماریوں میں پاکستان کی ایک کثیر ابادی کو “دوسروں “ یعنی Others میں ڈالا ہے۔ اس لفظ سے ایسا لگتا ہے کہ یہ لوگ پاکستانی نہیں بلکہ “دوسرے “ ہیں پاکستان میں اب تک پانچ مردم شماریاں ہوئی ہیں۔ ملک میں آخری مردم شماری آج سے اٹھارہ سال…

خونی چوک

ہمیں باور کرایا جاتا ہے کہ پاکستان اپنے جغرافیائی لحاظ سے ایک خونی چوک ہی ہے۔ مطلب یہ کہ یہاں عالمی طاقتیں اپنی جنگیں لڑ رہی ہیں۔ مگر کیا کرے پورے عالم میں اس دلیل کو کوئی ماننے کے لئے تیار نہیں 16 دسمبر 2008ء کا دن سیاہ ترین تھا ۔ میں نے…

پاکستان کی تعلیمی پالیسیاں اور زبان کا مسئلہ

اردو کو باوجود وعدوں اور قانون سازی کے سرکاری زبان کا درجہ نہیں دیا جاسکا۔ اس سلسلے میں سپریم کورٹ نے بھی واضح احکامات دیے لیکن اردو دفتری یا سرکاری زبان نہ بن سکی۔ کئی دعووءں کے باوجود انگریزی کی حیثیت کو تبدیل نہیں کیا جاسکا۔ انگریزی…

وادئ سوات کی دو ضلعوں میں تقسیم

سوات میں دہشت کے راج اور 2010ء کے بد ترین سیلاب کے بعد اس وقت کی حکومت نے ضلع سوات کو دو ضلعوں میں تقسیم کرنے کی تجویز دی تھی تاہم تاحال اس پر عمل نہیں ہوسکا۔ ایک ایسے ملک میں جہاں اٹھارہ سالوں سے مردم شماری نہیں کی گئی ہو بڑا مشکل ہے کہ…

ہم خوش کیوں نہیں ہیں؟

اج کے دور میں خصوصاً ہمارے معاشرے میں خوشی کیوں مفقود ہورہی ہے ایک بہت بڑا سوال ہے۔ ویلیم بلیک نے کہا تھا، ’A mark on every face I meet, Marks of weakness, marks of woe ‘ یعنی جس چہرے سے بھی ملتا ہوں میں اسی پہ لاچاری اور اداسی کی نشانیاں…

وادئ سوات کے پُرفضا مقامات کی سیر اور کچھ مسائل کا تذکرہ

ٹریکینگ کے لئے سوات وادی بہت آسان اور خوبصورت ہے۔ یہاں کے پہاڑی راستے خطرناک نہیں اور لینڈ سلائڈنگ کا بھی اتنا خطرہ نہیں مئی کی 26 تاریخ تھی۔ پاکستان کے بیشتر شہروں کا درجہ حرارت 45 ڈگری سے زیادہ تھا۔ جبکہ مجھے ٹھنڈ لگ رہی تھی۔ میں کسی چٹان…

خیبر پختون خوا میں زبانوں کے فروغ کا ادارہ

اس طرح کی قومی یکسانیت کا رجحان ’جدیدت ‘ (Modernity ) کے دوران دُنیا پر بہت غالب رہا۔ قومی وحدت کے خبط میں مبتلا ملکوں میں ثقافتی، مذہبی، لسانی اور نسلی تنوع کو  اکثر ایک مسئلہ سجمھا جاتا ہے۔ ایک قومی ریاست اور ’شناخت ‘ کی تشکیل میں اس تنوع…

سوات میں زمین اور جنگلات کے تصّرف پر ’رواج ‘ کا راج

’دوتر ‘ کا یہ ملکیتی تصّور پختون معاشرے میں سرایت کرگیا۔ دوتر کا ہونا پختون شناخت بن گیا۔ اگر کوئی اپنا دوتر بیج دیتا تو وہ اپنی پختون شناخت بھی کھودیتا۔ ’’ جنگلات گھنے اور سایہ دار ہیں۔ پھل اور پھول کثرت میں ہیں “۔ یہ بات  629ء میں چینی…