Browsing Category

کالم

پاکستان میں کوئی بھی بحران جمود کو توڑنے اور اشرافیہ کے رویے کو بدلنے میں ناکام کیوں رہتا ہے؟

پاکستان ہمیشہ کسی نہ کسی بحران یا شدید مسئلے کا شکار رہتا ہے جس کے اثرات کا شکار زیادہ تر عام لوگ ہوتے ہیں۔ یہ ایک ایسا گھن چکر ہے جس میں عوام کو کبھی سکون کا وقفہ نہیں ملتا۔ اذیت در اذیت زندگیاں یونہی گزرتی ہیں۔ کچھ لوگ کوشش کرکے ملک سے…

دم توڑتی اُمیدیں

یوم آزادی کے موقع پر منعقد کی جانے والی سرکاری تقریب کے اندر رقص کی پرفارمنس پر مذہبی عناصر اور معاشرے کے کچھ طبقات کی جانب سے کافی مذمت کی گئی اور اس عمل کو شرمناک اور نظریہ پاکستان کے خلاف قرار دیا گیا۔ انہوں نے 14 اگست کی سالانہ تقریبات…

ہمارا سماجی شعور جذباتی بیانیوں کا اسیر ہے

ہمارے سماج میں سیاست اور سیاستدانوں کو کارکردگی کی بنیاد پر نہیں تولا جاتا، بلکہ سب کے  اپنے اپنے ’فین کلب‘ ہیں اور یہیں تک ایک عام سماجی شعور کام کرتا ہے کہ اپنی جماعت کی حمایت کرو، کیونکہ اس کے مطابق اسی سے انقلاب آئے گا۔ اس عام سوچ کا…

طالبان کی ممکنہ واپسی، اِس بار مختلف کیا ہے؟

گزشتہ کئی دنوں سے پاکستان کے شمال مغربی صوبے، خصوصاً خوب صورت وادی سوات میں طالبان کی موجودگی اور سرگرمیاں پاکستان کی مرکزی میڈیا اور سوشل میڈیا پر زیر بحث رہیں۔ جب طالبان نے سوات کی تحصل مٹہ کی چپریال وادی میں پہاڑوں پر ڈیرے جمائے اور…

آزادی کی ڈائمنڈ جُوبلی، پارلیمنٹ کے 75 سال

قیامِ پاکستان کی ڈائمنڈ جُوبلی مناتے وقت جہاں ایک طرف اُمید کے درجنوں چراغ منور ہیں جو پاکستانیت کے ارتقاء کی پرعزم کہانی سناتے ہیں، اچھے مستقبل کی آس جگاتے ہیں، تو دوسری طرف امسال یہ بات کھل کر سامنے آئی ہے کہ دنیا میں آبادی کے اعتبار سے…

پاکستان آزادی کے بعد ایک فلاحی ریاست کیوں نہیں بن سکا؟

پاکستان کا قیام بہت بلند دعووں کے ساتھ ہوا تھا، بہت خواب تھے جو ہم نے دیکھے تھے۔ خیال یہ تھا کہ  پاکستان ایک فلاحی ریاست ہوگی، اس میں انصاف اور عدل نظر آئے گا۔ اس کے لیے بارہا اسلام کا حوالہ دیا گیا۔ اسلام کے حوالے سے یہ تصور بھی ہمارے…

اقلیتیں ایک ایسی اکثریت کے ساتھ رہتی ہیں جو احساسِ برتری کے جذبات رکھتی ہے

پاکستان میں مذہبی اقلیتوں کے مسائل کے پر بات کرنے سے پہلے مردم شماری کے اعدادوشمار آپ کے سامنے رکھنا چاہتا ہوں۔ 1998 کی مردم شماری کے مطابق ملک میں 3.7 فیصد مذہبی اقلیتیں بستی ہیں۔ جن میں ہندو، مسیحی، بہائی، پارسی، احمدی اور یہودی شامل…

ماضی کے سایے جو اب تک تعاقب میں ہیں

چند دن قبل کابل کے اندر القاعدہ کے سربراہ ایمن الظواہری ایک امریکی ڈرون حملے میں مار دیے گئے۔ ظواہری ایک گھر میں موجود تھے جو مبینہ طور پر افغان وزیر داخلہ سراج الدین حقانی کے ایک قریبی ترین معاون کی ملکیت ہے۔ یہ افغان طالبان کے لیے شرمندگی…

’میر جان‘ کا تجریدی رُخ

ناول اپنا چہرہ خود بناتا ہے‘ کردار اپنا مقام خود بناتے ہیں۔ لکھنے والا ان کی نفسیات لکھتا ہے۔ میرا خیال ہے کہ عامر رانا نے اپنے ناول میر جان میں اپنے قاری کی یکسوئی کا امتحان لیا ہے۔ پڑھنے والے کو دیر تک پتہ ہی نہیں چلتا کہ کہانی کا سرا…

دوسروں کے بارے رائے قائم کرنے کا شوق

ہم سب دوسروں کے متعلق ایک رائے رکھتے ہوتے ہیں اور اس پر پختگی سے قائم بھی ہوتے ہیں۔ ہم دوسروں کا محاسبہ بھی شوق سے کرنا چاہتے ہوتے ہیں۔ لیکن اپنی ذات اور اس کی خامیوں کو بھول جاتے ہیں۔ اپنا تزکیہ نہیں ہوتا، لیکن کیا یہ سچ نہیں کہ ہم سب اپنی…