Browsing Category

کالم

انصاف پسند استبداد کا تصور

ہمارے ہاں جب سیاسی نظم کی بات ہوتی ہے تو عوام کی اکثریت اگرچہ آمریت اور ڈکٹیٹرشپ کی مخالفت کرتی ہے، تاہم ان کے ہاں جمہوریت کے جدید نظم و اقدار کی واشگاف قبولیت و حمایت بھی نہیں پائی جاتی۔ اس حوالے سے بالخصوص ملک کے سربراہ اور حاکم کے…

کیا پاکستان کو ایک مذہبی ریاست ہونا چاہیے؟

میاں طفیل محمد مرحوم (سابق امیر جماعت اسلامی) نے ’’جماعتِ اسلامی کی دستوری جدو جہد‘‘ کے عنوان سے ایک کتاب مرتب کی ہے۔ اس کتاب کا پہلا باب ’پاکستان کو ایک مذہبی ریاست ہونا چاہیے‘ کے عنوان سے ہے۔ اس باب کا آغاز ایک مباحثہ سے ہوتا ہے۔ یہ…

بابا گرو نانک: دل میں اُتر جانے والی شخصیت

ایک عرصہ پہلے جب میں نے بابا گرونانک کی شخصیت اور ان کے افکار کا مطالعہ شروع کیا تو مجھے یوں لگا جیسے ان کی شخصیت میرے دل میں اترتی چلی جارہی ہے۔ وہ ایک عظیم خدا پرست اور انسان دوست شخصیت تھے۔ ایک پاک دل اور پاک باز وجود، سچائی کا طالب اور…

پاکستان میں عوامی سطح پر دانشور کا کردار

ترقی یافتہ معاشروں میں دانشور کا عوامی سطح پر ایک کردار ہوتا ہے۔ یہ کردار دو دہائیاں قبل تک زیادہ وسیع اور مؤثر تھا کہ دانشور سیاسی اور سماجی منظرنامے میں مقتدرہ اور عوام کے مابین ایک ربط کی حیثیت سے موجود تھے۔ مگر سوشل میڈیا کے آنے کے بعد…

 کیا ماحولیاتی تبدیلی پاکستان کے لیے قومی سلامتی کا مسئلہ ہے؟ 

دنیا بھر کے سائنسدان اور سیاسی، سماجی نمائندے موسمیاتی تبدیلی کو تیزی سے بڑھتے سب سے بڑے خطرے کے طور پہ تسلیم کر رہے ہیں۔ اسی تناظر میں بروز جمعہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں اس کے امن و سلامتی پر اثرات کے حوالے سے تبادلہ خیال اور گلوبل…

مولانا طارق جمیل کا برانڈ

مولانا طارق جمیل صاحب نے ایک برانڈ اپنے نام سے متعارف کروایا ہے۔ ان کا کہنا ہے میری سرپرستی میں چلنے والے اداروں کے اخراجات اور اُن میں تعلیم حاصل کرنے والے بچوں کی کفالت اس کاروبار کا بنیادی مقصد ہے۔ انہوں نے علماء کرام سے بھی گزارش کی ہے…

حیرت تو حیرت ہے!

الیکشن کمیشن کے فیصلے نے خو شگوار حیرت میں مبتلا کر دیا۔ حیرت مگر کتنی ہی خوشگوار کیوں نہ ہو، حیرت ہی ہوتی ہے۔ حیرت کیا ہے؟ خلافِ معمول یا خلافِ توقع واقعے پر انسانی ردِ عمل۔ چاند روز نکلتا ہے۔ ہلال سے بدر ہوتا اور پھر بدر سے ہلال ہوتاہے۔…

پاکستان کی رُوح

پاکستانی شہریت کو اب مذہبیت کے عنصر کی بنیاد پر تولا جا رہا ہے۔ مقتدر اشرافیہ کے نزدیک یہ ایک مثبت رجحان ہے کیونکہ انکے خیال میں اس سے قومی یکجہتی کو یقینی بنایا جاسکتا ہے۔ مگر بدقسمتی سے بجائے بہتر اخلاقیات اور دیانت داری کو فروغ دینے کے،…

سوشل میڈیا کے دور میں صحافتی اقدار

سوشل میڈیا نے صحافت کے شعبے اور مین سٹریم میڈیا پر کیا اثرات مرتب کیے ہیں؟ اس موضوع پر بہت ساری تحقیقات اور آراء موجود ہیں جن سے استفادہ کیا جاسکتا ہے۔ شروع میں جب سوشل میڈیا محض لوگوں کے باہمی رابطے کا ذریعہ ہونے کے کردار سے نکل کر ایک…

مابعد جدیدیت: چند منشتر خیالات

مابعد جدیدیت کی اصطلاح مابعد جدید زمانے کی شاید سب سے زیادہ غلط سمجھی گئی اصطلاحات میں سے ایک مانی جاسکتی ہے۔ بیسویں صدی کے وسط میں جب مابعدجدیدیت کی اصطلاح فلسفہ کے ساتھ ساتھ مصوری، موسیقی، تعمیرا ت کے فن اور ادب میں بھی نئے طرز احساس کے…