Browsing Category

کالم

ویژن-2047ءکے لیے ڈائیلاگ

اگلے سال پاکستان اپنے قیام کی گولڈن جوبلی منائے گا۔آزادی موہوم کے اِن پچھتر سالوں پر بہت کچھ لکھا اور بولا جائے گا۔یقیناََ بہت ساری تقریبات ہوں گی۔کامیابیوں کا خوب چرچا ہوگا۔آدھے ادھورے خوابوں کا بھی شمار ہوگا۔ میری نظر میں یہ ایک نادر موقع…

مرغا بنائی گئی قوم

جب سے کرونا ایس او پیز پر عمل درآمد کروانے کے لیے حکومتِ وقت نے وردی پوشوں کی خدمات حاصل کی ہیں ہر طرف بے جا بے جا ہو گئی ہے۔ سرکاری سرپرستی میں قوم کو شدید مہذب اور اخیر شائستہ طریقے سے کرونا اور اس سے بچاؤ کی احتیاطی تدابیر سے متعلق فوری…

اقلیتوں کے مسائل، حقائق وتجاویز

انسانی حقوق اور اقلیتوں کے مسائل کے حوالے سے پاکستان ایک طویل عرصے سے تسلسل کے ساتھ اعترضات و خدشات کی زد میں ہے۔ اس کی حالیہ مثال چند دن قبل یورپی یونین کی ایک قرارداد   کہ پاکستان جب تک توہین مذہب کے قوانین پر نظرثانی نہیں کرتا اس وقت تک…

بدلتا نیوزی لینڈ؛ کرائسٹ چرچ مساجد پر حملہ کے دو سال

“میرے افغانستان سے تعلق پر مجھے بارہا دہشت گرد پکارا گیا۔ مجھے خوشی ہے کہ تم نے مجھ سے نہ صرف یہ خطاب لے لیا بلکہ یہ ثابت کر دیا کہ دہشت گردی کا کوئی رنگ، نسل، یا ملک نہیں ہوتا۔” میر واعظ کے یہ تاریخی الفاظ، پرنم آنکھوں اور ہونٹوں پہ…

8 مارچ۔۔۔۔عورت مارچ

صاحبزادہ محمد امانت رسول ہر سال 8 مارچ عورتوں کے حقوق کے حوالے سے منایا جاتا ہے۔ پاکستان میں کئی سالوں سے یہ دن منایا جارہا ہے۔ گزشتہ سال اس دن پر کچھ خواتین کے ہاتھ ایسے بینرز اور پلے کارڈ دیکھے گئے جس کے بعد ہمارے ہاں اس کی حمایت و مخالفت…

دیکھیں لالا! ہم نے ترقی کی ہے

دیکھیں لالا! ہمارے باپ دادا پتھروں پر چلتے تھے۔ ان کے گاؤں گاؤں تک راستے پتھروں کے تھے۔ وہ دریا رسیوں سے پار کرتے تھے جن کو غالباًََ ڇیان کی رسیوں سے بنایا جاتا تھا۔ لالا کیا کہوں، ہمارے والدین بھی ان ہی پتھروں پہ چلتے رہے، ہمارا بچپن بھی…

انصاف پسند استبداد کا تصور

ہمارے ہاں جب سیاسی نظم کی بات ہوتی ہے تو عوام کی اکثریت اگرچہ آمریت اور ڈکٹیٹرشپ کی مخالفت کرتی ہے، تاہم ان کے ہاں جمہوریت کے جدید نظم و اقدار کی واشگاف قبولیت و حمایت بھی نہیں پائی جاتی۔ اس حوالے سے بالخصوص ملک کے سربراہ اور حاکم کے…

کیا پاکستان کو ایک مذہبی ریاست ہونا چاہیے؟

میاں طفیل محمد مرحوم (سابق امیر جماعت اسلامی) نے ’’جماعتِ اسلامی کی دستوری جدو جہد‘‘ کے عنوان سے ایک کتاب مرتب کی ہے۔ اس کتاب کا پہلا باب ’پاکستان کو ایک مذہبی ریاست ہونا چاہیے‘ کے عنوان سے ہے۔ اس باب کا آغاز ایک مباحثہ سے ہوتا ہے۔ یہ…

بابا گرو نانک: دل میں اُتر جانے والی شخصیت

ایک عرصہ پہلے جب میں نے بابا گرونانک کی شخصیت اور ان کے افکار کا مطالعہ شروع کیا تو مجھے یوں لگا جیسے ان کی شخصیت میرے دل میں اترتی چلی جارہی ہے۔ وہ ایک عظیم خدا پرست اور انسان دوست شخصیت تھے۔ ایک پاک دل اور پاک باز وجود، سچائی کا طالب اور…

پاکستان میں عوامی سطح پر دانشور کا کردار

ترقی یافتہ معاشروں میں دانشور کا عوامی سطح پر ایک کردار ہوتا ہے۔ یہ کردار دو دہائیاں قبل تک زیادہ وسیع اور مؤثر تھا کہ دانشور سیاسی اور سماجی منظرنامے میں مقتدرہ اور عوام کے مابین ایک ربط کی حیثیت سے موجود تھے۔ مگر سوشل میڈیا کے آنے کے بعد…