Browsing Category

تجزیے

مولانا وحیدالدین خان، سیکولرزم اور بھارت کے مسلمانوں کی مذہبی قیادت

26 جنوری کو بھارت کے یوم جمہوریہ کے موقع پر بی جے پی حکومت نے پدم وبھوشن ایوارڈ کے لیے 119 شخصیات کو نامزد کیا جن میں مولانا وحیدالدین خان بھی شامل ہیں۔ 96 برس کے بزرگ مسلم عالم جنہیں ’مسلمانوں کا گاندھی‘ بھی کہا جاتا ہے اپنی عدم تشدد کی…

قومی ریاست، عالمگیریت اور پاکستان

نظم اجتماعی ایک ارتقا پذیر عمل ہے۔ پہلی جنگ عظیم کے بعد، یہ کہا جا سکتا ہے کہ سیاسی نظم کے دور جدید کا آغاز ہوا۔ قومی ریاست اور اقوام متحدہ، دو اداروں کی اس تشکیل نو میں اساسی اہمیت ہے۔ زمین پر مختلف لکیریں کھینچ کر قومی ریاستوں کو سندِ…

ہنگامہ ہے کیوں برپا؟

12 مارچ 2021ء کو نئی سینٹ آف پاکستان کو آئینی طور پر موجود ہونا ہے۔ کیونکہ دستور ہاؤس آف فیڈریشن کو ’’تسلسل کا حامل‘‘ آئینی ادارہ قرار دیتا ہے۔ یہ الگ بات ہے کہ 1977ء اور 1999ء کی فوجی مداخلتوں کے بعد اِس ادارے کو بھی توڑ دیا گیا تھا۔ آئین…

ادیب نما مسخروں کا دور 

انحطاط پذیر سماج میں تحسین و تنقید، کذب و صدق، حب و بغض سمیت کوئی بھی رویہ اور فعل خالص نہیں ہوتا کہ ہر عمل کی عمارت کسی نہ کسی زاتی مفاد کی بنیادوں پر اٹھائی جاتی ہے۔ ایسے معاشرے کی اکثریت مسلسل ایک خوف تلے زندگی گزارتی ہے اور وہ ہے: منکشف…

پاکستان میں بڑھتی ہوئی فرقہ واریت اور اس کا حل

پاکستان ایک بار پھر فرقہ وارانہ فسادات و قتل و غارت کی دہلیز پر پہنچتا ہوا دکھائی دے رہا ہے۔ گزشہ  کچھ عرصے سے تسلسل سے پیش آنے والے واقعات نے فرقہ وارانہ ہوا کو ایک بار پھر بھڑکایا ہے۔ جبکہ مسلم ممالک کی باہمی چپقلش اور رسہ کشی میں…

نئے نقاد کے نام وارث علوی کا خط

عزیزی و محبی! 9جنوری 2014، میرا اس عالمِ آب و گِل میں آخری دن تھا۔ بہ وقتِ رخصت جی مضطرب بھی تھا اور مطمئن بھی۔ اضطراب یہ کہ ادب فروشوں سے جنگ ابھی جاری تھی کہ پیغامِ اجل آ گیا۔ اطمینان اس بات پر کہ ادب کی فضاؤں میں عمداً اندھیرے پھیلانے…

پاکستان میں قانون کی مبہم راہیں

ٓٓآج کل بات بات پر قانون کی حکمرانی کے خواب بنے جاتے ہیں۔ پھر یہ خواب خواہشوں کی گرداب میں کہیں کھو جاتے ہیں۔ قدیم سماج میں قبائلی سرداروں کے احکامات، بادشاہوں کے فرمودات اور مذہبی رہنماؤں کے فتوے حرف آخر ٹھہرتے تھے۔ جدید ریاستوں کی تشکیل…

خالد جاوید کا ناول ’موت کی کتاب‘: ایذارسانی کی کتاب

خالد جاوید کا ناول" موت کی کتاب" پڑھ کر امریکی ادیب سٹیفن کنگ کا یہ قول شدت سے یاد آتا ہے: " بری تحریر، زبان و کلام کی خرابی اور مشاہدے کے عیوب ہی سے پیدا نہیں ہوتی؛ بری تحریر، عموماً ایسی کہانیاں سنانے سے کڑے انکار کا نتیجہ ہوتی ہے، جن میں…

اختر رضا سلیمی کا ناول “جاگے ہیں خواب میں” : اردو ادب کا نوحہِ نم ناک

"جاگے ہیں خواب میں"مطبوعہ رمیل ہاؤس آف پبلی کیشن  کے سرورق کی آرائش, فلیپس اور بیک کور پر ناول کے بارے میں "مجددینِ ادب" اور دیگر لکھاریوں کی آراء کی نمائش دیکھ کر اردو ادب کے قارئین نہال ہو ہو جاتے ہیں کہ بالآخر وہ ناول منصہِ شہود پر آ ہی…

آمنہ مفتی کا ناول “پانی مر رہا ہے” : اردو ناول مر رہا ہے

موسمی نقادوں اور مبصروں نے عظیم، اہم، رجحان ساز، شاندار اور عمدہ ناول جیسی اصطلاحات کو ان کے بے موقع و بے محل کثرتِ استعمال سے بے وقعت اور حقیر کر دیا ہے۔  قارئین ان صاحبان کے جھوٹے تبصروں اور گمراہ کن آراء کی بدولت ناقص ادب پڑھ پڑھ کر اپنا…