عیدالفطر کے موقع کی دلچسپ بلتی رسوم و روایات

بلتستان ماضی میں تبت خورد سے موسوم تھا۔ بہت عرصہ تک یہ خطہ لداخ و تبت کے ساتھ منسلک رہا۔ جس کے باعث یہاں کے رہن سہن اور رسوم و رواج اور روایات پر تبتی اثرات نمایاں ہیں۔ سولہویں صدی عیسوی میں یہاں اسلام ایرانی مبلغین جو کشمیر سے یہاں وارد…

بلتستان یونیورسٹی، خِطے کے روشن مستقبل کی ضامن

بلتستان یونیورسٹی، گلگت بلتستان بالخصوص بلتستان ڈویژن کے طلباء و طالبات کے لئے حکومت کی جانب سے ایک بڑا تحفہ ہے۔ سال2011ء میں قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی کے سب کیمپس سے شروع ہونے والے اس تعلیمی ادارے نے 25 اگست 2017ء کو بلتستان یونیورسٹی کے…

گلگت بلتستان میں سیاحت کا شعبہ متأثر ہو رہا ہے

وفاقی حکومت نے ملک میں سیاحت کے شعبے کی ترقی کے لیے کئی اقدامات اُٹھائے ہیں تاکہ ماضی کی نسبت زیادہ سے زیادہ سیاحوں کو راغب کیا جاسکے۔ حکومت کی جانب سے کی گئی کوششوں میں سب سے اہم  ویزا پالیسی میں نرمی ہے جس کے تحت دنیا کے 50 ملکوں کے…

گلیشیرز کی سرزمین پانی کو ترستی ہے

گلگت بلتستان کو قدرت نے بے شمار قدرتی وسائل سے نوزا ہے جن میں سے ایک خزانہ یہاں پر واقع دنیا کے بڑے گلیشیرز کا سلسلہ ہے۔ بالخصوص بلتستان میں قطبین کے بعد دنیا کے سب سے بڑے گلیشیرز پائے جاتے ہیں۔ ایک اندازے کے مطابق اس علاقے میں جتنے بڑے  …

بلتستان میں جشنِ نوروز

نوروز فارسی زبان کا لفظ ہے جس کا مطلب ’’نیا دن‘‘ ہے۔ کہا جاتا ہے کہ اس دن کو منانے کی روایت بہت پرانی ہے۔ دنیا کے مختلف حصوں میں یہ تہوار ہر سال 21مارچ کو منایا جاتا ہے۔ شمسی ماہ کے حساب سے 21 مارچ کو سورج قطر فلک پر اپنا ایک سالہ سفر تمام…

یخ بستہ طویل راتیں اور بلتی لوک بیٹھک کی معدوم روایت

گلگت بلتستان ملک کے انتہائی شمال میں سطح سمندر سے لگ بھگ پانچ ہزار تا سولہ ہزار فُٹ کی بلندی پر واقع ہے۔ دنیا کے بلند ترین پہاڑی سلسلوں میں گھِرا ہونے کے باعث یہاں شدید ترین سردی پڑتی ہے۔  بلتستان کے مرکزی  شہر سکردو  سمیت کئی اضلاع کے…

گلگت بلتستان کے بچھڑے خاندان ایک انسانی المیہ

گلگت بلتستان کی تاریخی، سماجی ، معاشی اور معاشرتی صورت ِحال پر نظر دوڑاتے ہیں تو انسانی حقوق کی پائمالی اور محرومیوں کی طویل داستان کے اوراق جا بجا بکھرئے ملتے ہیں ۔کامیاب جنگ ِآزادی لڑنے اور اس جنگ میں ایک ریاست کی منظم فوج کو شکست دینے کے…

بلتستان،تعلیمی ارتقاء کی 126 سالہ تاریخ

بلتستان قدیم تہذیب  و تمدن کا حامل خطہ ہے ۔ تقریباً 600 سال قبل  صوفیائے کرام کے ہاتھوں یہاں اسلام  کی اشاعت کے بعدان صوفیائے کرام نے یہاں برداشت اور رواداری کا بھی درس دیا ۔ ان صوفیائےکرام کی یہاں آمد کے ساتھ ہی یہاں صحیح معنوں میں انسانیت…

گلگت بلتستان میں حقوق کی جدوجہد

گلگت بلتستان  کی تاریخ بہت ہی منفرد ہے۔ یہاں کے لوگوں نے1947-1948 میں یہاں کے باشندوں نے  کشمیر کے ڈوگرہ  راج کے کے خلاف آزادی کی لڑائی لڑی  اور  اپنی مدد آپ کے تحت  28 ہزار مربع کلو میٹر پر مشتمل خطے کو آزاد کرایا  جس کا الحاق پاکستان اور…

گلگت بلتستان آرڈر 2018 کے خلاف عوامی احتجاج کیوں؟

وفاقی کابینہ اور نیشنل سکیورٹی کونسل سے منظوری کے بعد وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے دورہ گلگت کے موقعے پر گلگت بلتستان اسمبلی اور کونسل کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کے دوران  گلگت بلتستان آرڈر  کا باقاعدہ اعلان کیاہے۔ حکومت نے ان اصلاحات کی…