نقوشِ بلتستان

محمد حسن حسرت کی علمی وادبی شخصیت محتاجِ تعارف نہیں۔ علمی خدمات کے تناظر میں فقط اتنا کہنا ہی کافی ہوگا کہ انہوں نے بلتستان میں فاصلاتی نظام تعلیم کو علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی کے پلیٹ فارم سے صحیح معنوں میں متعارف کرایا اور اس نظام کے تحت…

چلیں، ہم متنازعہ ہی سہی

وزیراعظم عمران خان کے دورہ گلگت کے موقع پر اُن کی تقریروں میں گلگت بلتستان کے مستقبل کے تعین کے حوالے سے کوئی ذکر نہ ہونے پر یہاں کے لوگوں میں تشویش اور مایوسی پائی جاتی ہے۔ بھارت کی جانب سے لداخ کے نقشے میں تبدیلی کرنے اور گلگت بلتستان کو…

بلتستان کا ’پاری گاؤں‘، جہاں سسپلو سیب اور بدھ مت کے آثار ہیں

سسپلو سیب بالعموم پورے بلتستان اور بالخصوص پاری کھرمنگ کی دنیا بھر میں پہچان کا ذریعہ ہے۔ اب تک لوگ انفرادی سطح پر اس سیب کی مارکیٹنگ کرتے رہے ہیں جو ملک کے اندر محدود پیمانے پر تھی۔ ذایقہ، خوشبو اور جاذبِ نظر رنگت کے باعث یہ سیب خصوصی…

گلگت بلتستان میں غذائی قلت کے بڑھتے خدشات

سکردو میں حسب سابق اس سال بھی عالمی یوم خوراک اور غربت کے خاتمے کے عالمی دن خاموشی سے گزر گئے۔ محکمے کی بے حسی اور ناقص کا رکردگی کا نتیجہ ہے کہ یہ علاقہ جغرافیائی اعتبار سے رسک زون ہونے کے باوجود یہاں ابھی تک فوڈ سیکورٹی کے حوالے سے کوئی…

بلتستان میں مذہبی سیاحت کے مواقع

قدرت نے بلتستان کو جہاں دیگر بے پناہ خوب صورت مناظر سے نوازا ہے اور وہاں موجود بلند و بالا چوٹیوں کے باعث یہ خطہ دنیا بھر کے سیاحوں، کوہ پیمائوں اور مہم جوؤں میں مقبول ہے۔ اس کے ساتھ خطے میں مذہبی سیاحت کے بھی بڑے مواقع موجود ہیں۔ یہ سر…

گلگت بلتستان سے اسٹیٹ سبجیکٹ رُولز کا خاتمہ حکومت پاکستان نے نہیں کیا

پانچ اگست کو بھارتی حکومت کی جانب سے ریاست جموں کشمیر کی مخصوص حیثیت میں تبدیلی کے بعد گلگت بلتستان میں، بالخصوص نوجوان طبقے کی ظرف سے ایک بحث چھڑی ہوئی ہے کہ پاکستان نے گلگت بلتستان میں پہلے ہی SSR (سٹیٹ سبجیکٹ رولز) کو ختم کردیا تھا۔ اب…

ٹریفک حادثے اور ہمارے غیر ذمہ دارانہ رویے

گلگت  بلتستان بالخصوص بلتستان کی فضا اِن دنوں سوگوار ہے۔ سکردو سے راولپنڈی جانے والی مسافر بس کو بابوسر کے علاقے گِٹی داس میں پیش آنے والے حادثے میں چھبیس قیمتی انسانی جانوں کا نقصان ہوا۔ جاں بحق ہونے والے مسافروں میں خواتین، بچوں کے ساتھ…

سیاحتی مرکز، جہاں ریسکیو اور ایمبولینس کی سہولیات نہ ہونے کے برابر

سکردو میں کئی اہم ادارے نہایت ہی کسمپر سی کے عالم میں کام کررہے ہیں۔ اگرچہ یہ اپنے شعبےکے اعتبار سے انتہائی اہمیت کے حامل ہیں مگر حکام کی عدم توجہی کے باعث گویا یہ اس وقت آئی سی یو میں ہیں اور ان اداروں کی سانسیں اٹک رہی ہیں۔ جس ادارے کا…

گلگت بلتستان میں صحت کے شعبے کو درپیش مسائل

گلگت بلتستان میں عارضی بنیادوں پر کام کرنے والے ڈاکٹرز ایک بار پھر سروسز کی مستقلی کے لیے احتجاج کی جانب بڑھ رہے ہیں۔ ان ڈاکٹروں نے پہلے مرحلے میں گلگت، پھر سکردو میں پریس کانفرنس سے بات کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان بھر میں 10 اسپیشلسٹ…

اہلِ سکردو کو کیا ہوگیا ہے؟

کچھ عرصہ پہلے سکردو میں آنے والے حکومتی ذمہ داران سے جب بھی  ملاقات ہوتی اُن کی جانب سے پہلا جملہ یہ سننے کو ملتا کہ ہمیں اس بات کا بہت افسوس ہے کہ سکردو اب پہلے والا  نہیں رہا۔ اُن کا یہ جملہ یقینا ََہمارے لئے غیر متوقع ہوتا اور ہم اس پر…