مابعدجدیدیت: چند منشتر خیالات

مابعد جدیدیت کی اصطلاح مابعد جدید زمانے کی شاید سب سے زیادہ غلط سمجھی گئی اصطلاحات میں سے ایک مانی جا سکتی ہے۔ بیسویں صدی کے وسط میں جب مابعدجدیدیت کی اصطلاح فلسفہ کے ساتھ ساتھ مصوری، موسیقی ، تعمیرا ت کے فن، اور ادب میں بھی نئے طرز احساس…

المیہ کا سفر

'المیہ کا سفر' نام دے کر اشفاق سلیم مرزا صاحب نے اپنی کتاب کے لیے آئندہ ہونے والی گفتگو کو خود ہی ایک سمت دینے کا اہتمام کیا ہے۔ یہ حقیقت ہے کہ دنیائے ادب میں المیہ کا آغاز یونانی ڈرامہ کو مانا جاتا ہے۔ جب کہ یہ کتاب یونانی کلاسیک ڈراموں کے…

بس کے ایک مسافر کی کہانی

وہ دروازے کے برابر ہی ایک سیٹ پر بیٹھا تھا۔ تبھی ا س کی نظر کھڑکی کے پاس ہی لگی ایک تختی پر پڑی، لکھا تھا، ’معذور افراد کے لیے۔‘ تختی پر اشارہ اسی کی سیٹ کی طرف تھا جس پر وہ بیٹھا تھا۔ بس کی بریکیں شاید ہوا خارج کرتی تھیں کیوں کہ جب انھیں…

بقائے دوام : میلان کنڈیرا کی ایک تخلیقی جہت

ارشد وحید نے اس ناول کو اردو میں ڈھالتے ہوئے عمدہ نثر اور فن ترجمہ میں اپنی مہارت کے باعث اردو قاری کو بھی حیرت اور خوشی کے اس سفر میں برابر شریک رکھا بقائے دوام کی کہانی کا آغاز ایک دل ربا اشارے سے زندگی پاتا ہے۔ ایک عورت رخصت ہوتے ہوئے…

عبداللہ حسین: اردو کے پہلے پاکستانی نثر نگار

عاجزانہ طورپر یہ دعوی بھی کیا جا سکتا ہے کہ پاکستان کی سیاست کا شعور جس پختہ اور گہری سطح پر عبداللہ حسین کے ناولوں میں پایا جاتا ہے گہرے سیاسی شعور اور خاص کر پاکستان کی سیاسی تاریخ پر گہری نظرکے حامل اہل قلم میں عبداللہ حسین سربرآوردہ…

زبان کو اپنی زندگی مرضی سے گزارنےکی آزادی دی جائے

ممتاز ناول نگار و کہانی نویس مرزا اطہر بیگ سےناول کی زبان اور اسلوب پر مکالمہ مرزا اطہر بیگ سے میرا اولین تعارف فلسفہ کے استاد کی حیثیت سے ہوا۔ گورنمنٹ کالج جب یونیورسٹی نہیں بنا تھا، تو ایم اے فلسفہ میں آپ شعبہ کے سب سے پسندیدہ اور ہر…

ایک دن کی زندگی کا روزنامچہ

’آزاد مہدی کے ناول ’ایک دن کی زندگی‘ پر تبصرہ ناول کا بنیادی موضوع اس کے عنوان کی پٹاری میں بند ہے۔ اس پٹاری کو کھولئے، تو پورا ناول اس کے ساتھ کھلتا چلا جاتا ہے۔ لیکن ایک اور اشارہ ہمیں ناول کے انتساب سے ملتا ہے جسے خواتین کے نام کیا گیا…

افسانے کی روایت کا اگلا پڑاؤ

وہ اپنے افسانوں کے مجموعے کچھوے میں لکھتے ہیں،”میں اپنی مصیبت میں زمینوں اور زمانوں میں آوارہ پھرتا ہوں۔ کتنے دن اجودھیا اور کربلا کے بیچ مارا مارا پھرتا رہا۔ یہ جاننے کے لیے کہ جب بھلے آدمی بستی چھوڑتے ہیں تو ان کےاو پر کیا بیتتی ہے؟“…

اردو ناول نگاری اور حلقہ ارباب ذوق کی تحریک

اردو میں امراؤجان ادا کے بعد سے اب تک سوا سوسال کے عرصہ میں عالمی ادبی معیار کے اعلی درجہ کے ناول اتنی کم تعداد میں سامنے آئے کہ انھیں انگلیوں پر گنا جا سکتا ہے ناول کی صنف اردو زبان میں باقی اصناف سخن کے مقابلے میں کم توجہی کا شکار رہی۔ اس…