عالمی اردو کانفرنس

زندگی تجربات سے بھرپور ہی رہتی ہے۔ سب سے اچھا تجربہ دانشمندوں اور محبت کرنے والے انسانوں کا ساتھ ہے ۔ جہاں آپ اپنے خیالات ، تصورات اور سوچ کو پوری دیانت اور آزادی کے ساتھ بیان کرسکیں۔ ایک ایسے وقت میں جہاں مصائب اور یاسیت نے ہمیں اپنے حصار…

سافٹ امیج ، انکار کی نفسیات اور حقیقت

ہمارا اختیار صرف اتنا ہے کہ ایک وقت میں کھڑے کھڑے ایک پیر اٹھا سکتے ہیں اور دوسرا نہیں، جبر و اختیار کا یہ ایک قدیمی اصول ہے۔ اصول کے خلاف جائیں گے تو ذمہ داری اپنی ہوگی۔ہماری بہت ساری پالیسیوں کا قریب قریب یہی حال ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ…

فٹ پاتھ ، بادام اور قابل لوگ

آپ نے اکثر دیکھا ہوگا کہ ایک شخص نے کسی دوسرے شخص کو فٹ پاتھ پریا بیچ سڑک میں روکا ہوگا اور حال چال پوچھ رہا ہوگا۔حال پوچھنا بڑی اچھی بات ہے اور اپنے اخلاق سے دوسروں کو متاثر کرنا ہرگز بری بات نہیں ہے البتہ اخلاق کا مظاہرہ وہاں کرنا چاہیے…

درخت ، قومی اثاثہ اور قوانین

کچھ سال پہلے لدھیانہ یونیورسٹی کے ایک سابق وائس چانسلر پروفیسر گروچن سنگھ اپنی جنم بھومی  فیصل آباد میں آئے تھے تو وہ اپنی درسگاہ زرعی یونیورسٹی فیصل آباد بھی گئے، تب یہ دیکھ کر حیران و پریشان ہو گئے کہ وہاں ان کی علمی درسگاہ میں قدیمی درخت…

ایک بے تکلف مکالمہ اور تاریخ کی دہرائی

کون کس کی زلف کے سر ہونے تک جیتا ہے اسے تو غالب مرحوم و مغفور نے یوں حل کیا کہ جب آپ کی آہ سحرہونے تک اثر کرپائے گی تب۔ یعنی یہ عمر عزیز اسی سڑک پر کسی لال بتی کی پیچھے دوڑتی بھاگتی پھرے گی۔ خیر جب آپ واپس آئیں گے تو پوچھیں گے چن مکھناں نے…

Virtual reality اور انفارمیشن کا دور

قلم برداشتہ لکھنے سے دل برداشتہ لکھنا کبھی کبھار بہتر اس لیے ہوتا ہے کہ بعض اوقات بار خاطر پر گراں گزرنا ازبس ضروری ہوجا تا ہے۔مسئلہ یہ ہے کہ اس پیچیدہ دور میں جہاں آپ کو یہ علم بھی نہیں ہوتا کہ ملنے والی اگلی معلومات کیا ہوسکتی ہیں۔دھڑام…

لا تعلق معاشرہ ، مائنڈ سیٹ اور عفریت

          یہ ایک تلخ حقیقت ہے کہ ہمارے ملک میں ہزاروں لوگ مارے جا چکے ہیں جبکہ ان کے پسماندگان کی تعداد لاکھوں بنتی ہیں اور متاثرین کروڑوں میں موجود ہیں۔ یہ مبالغہ آرائی نہیں آپ خود ذرا اس نکتہ پر غور فرمائیں۔اس بات سے انکار تو کسی کو نہیں…

تاریخ ، انسان اور ہم

معاشرہ وہی کامیاب ہوتا ہے جہاں عدل اور انصاف اساس کے طور پر شامل ہوتا ہے۔ سستا اور فوری انصاف ہی انسانوں کے احساس تحفظ کو بڑھاوا دیتا ہے اور انہیں وہ اعتبار دیتا ہے جس پر ایک انسان دوسرے انسان کے لیے مفید اور ہمدردانہ وجود رکھنے میں عار…

ناک کی مکھی اور بلوائیوں کی نفسیات

بزرگوں سے سنا تھا کہ اس ملک میں کبھی سائیکل پر بتی نہ لگانے پر سخت چالان ہوتا تھا۔اسی طرح کبھی لوگ آوارہ گردی کے کیس سے ڈرتے تھے اب تو دہشت گردی کے کیس سے کم پر کوئی اپنی جگہ سے بھی نہیں ہلتا۔ ہمارایہ روزمرہ کا مشاہدہ ہے کہ جو لوگ اپنی ناک…

خوشیاں، جعلی نوٹ اور عید مبارک

بھوٹان وہ واحد ملک ہے اور جنوبی ایشیا کا ایک غریب ملک بھی ،جس کے ایک بادشاہ نے اپنا نظریہ 1970میں’’ بنیادی قومی خوشی‘‘ کا پیش کیا یہ توکسی بھی سقراط بقراط کو پتہ نہیں کہ انسان پہلے دکھی ہوا تھا یا خوش ؟ لیکن خوش رہنے کا ہنر سیکھنے میں وہ…